الیکشن 2018

الیکشن 2018

تحریر فوٹوگرافر محمد اظہر حفیظ

الحمد اللہ مسلم لیگ کی حکومت اپنے پانچ سال مکمل کرکے رخصت ھوئی اور نئی حکومت آنے والی ھے اس حکومت کی تذلیل میں کوئی کسر نہیں اٹھا رکھی گئی جو کام انھوں نے اچھے کیے ان کو سراھنا چاھیئے تھا اور جو غلط کیے اس کو غلط کہنا چاھیئے تھا اس سے پہلے پیپلز پارٹی کی حکومت تھی میری اس وقت بھی یہی درخواست تھی اور آج بھی یہی ھے کہ جو حکومت کے اچھے اقدامات ھیں انکو اچھا کہیں جو برے انکو برا کہیں جو بھی حکمران چور ھے کرپٹ ھے نشئی ھے عیاش ھے پہلے تو ایسے انسان کو ووٹ کیوں دیتے ھو اس کو تو منتخب ھی نہیں ھونا چاھیئے ووٹ دیتے وقت پارٹی سے ایسوسیشن کے ساتھ ساتھ اس امیدوار کا صاحب کردار ھونا بھی ضروری ھے ضروری نہیں ھر پارٹی کا ھر امیدوار اچھا انسان ھو۔ ووٹ کا احترام کیجئے اور جو اس کے قابل ھو اس کو سوچ سمجھ کر ووٹ دیجئے۔
میری تمام ووٹرز سے التجا ھے اپنے ووٹ اور زبان کا استعمال سوچ سمجھ کر کیجئے ووٹ آپکے لیے اچھی قیادت سامنے لیکر آتا ھے اور زبان آپکے اپنے کردار اور تربیت کو سامنے لیکر آتی ھے
ایسی قیادت کو منتخب ھونے میں مدد کیجئے جو پاکستان کیلئے بہتر ھو اپنی سوچ سمجھ کے مطابق اچھے صاحب کردار لوگوں کا انتخاب کیجئے۔
جب سے ھوش سنبھالا کبھی فوجی حکومت کبھی سول حکومت پھر فوجی حکومت پھر سول حکومت اس میں استحکام آنا چاھیئے اور ھر حکومت کو اپنا وقت پورا کرنے کا موقعہ ملنا چاھیئے تاکہ وہ جواب دہ ھو عوام کو نہ کہ مظلوم بن کر روتا رھے۔ مجھے یاد ھے ضیاء الحق صاحب کا ریفرنڈم تھا اس کو بہت اسلام سے وابستہ کیا گیا آپ اسلام کو ووٹ دیں یا پھر۔۔۔۔
میری تائی جی کو درخواست کی تائی جی آپ ھمارے ساتھ اسلام آباد چلیں کہنے لگیں نہ لال پہلی واری سلام کو میرا ووٹ چاھیئے میں نہیں جاوں گی بس ووٹ ڈالوں گی تائی جی یہ سب جھوٹ ھے نہ میرا لال مجھے پتہ ھے اور میں سلام کو ووٹ دوں گی۔ میرے چچا میاں نواز اور چاچی کو ھم خالہ کہتے ھیں خالہ نے کبھی چاچا جی کا نام نہیں لیا اسی طرح وہ کسی بھی نواز کو نواز نہیں کہتیں کہ بے ادبی نہ ھوجائیں خالہ ووٹ کس کو دینا ھے اظہر کاکا شریف شیراں والے نوں خالہ یہ کون ھے شریف شیراں والا خالہ جا بابو تو زیادہ شرارتاں نہ کر تینوں سب پتہ اے۔
خالہ کی طبیعیت ناساز ھے سب دوست ان کیلئے صحت کے ساتھ ایمان والی زندگی کی دعا کریں امین
گاوں کے ماحول میں زیادہ ووٹ ڈالنا ووٹ والے باکس میں سیاھی ڈال کر ووٹ ضائع کرنے کے عمل کو بہت ھوشیاری اور چالاکی سمجھا جاتا ھے ۔ میری سب پولنگ سٹیشن ایجنٹس خواہ کسی بھی پارٹی سے ھوں سے درخواست ھے جب تک پولنگ کا عمل مکمل نہ ھو اپنی سیٹ مت چھوڑیں۔رزلٹ لیں سائن کریں اپنی کاپی لیں اور بعد میں دھاندلی کا واویلا نہ کریں دھاندلی ھمیشہ وھاں ھوتی ھے جہاں موقع دیا جاتا ھے الیکشن آنے والا ھے اپنے پولنگ ایجنٹس کی تربیت کا انتظام کریں۔ سوشل میڈیا کے ناخداوں سے مودبانہ درخواست ھے بغیر تحقیق مواد اگے مت پھیلائیں۔ مثبت سیاست کو فروغ دیں منفی سیاست سے گریز کریں کسی کے بچوں کو بیوی کو بہن بھائیوں کو نشانہ بنانا نا مناسب ھے۔
عزت دینے کے کلچر کو فروغ دینا چاھیئے جو ھار جائے وہ اپنی شکست کو تسلیم کرے اور جیتنے والے امیدوار کو مبارکباد دے تاکہ سیاسی ماحول فروغ پائے۔ نئے لوگوں کو چانس ملنا چاھیئے اور جن کو چانس ملے انخو چاھیے پاکستان کی بہتری کیلئے کام کریں اور ڈیم۔سکول۔ھسپتال۔ذرائعے آمدورفت ۔اور عام آدمی کی زندگی کا معیار بہتر کریں اللہ پاکستان کو قائم دائم رکھیں امین اور ایک اچھی قیادت عطا کریں امین پاکستان زندہ باد

Prev یہ کیا ھو رھا ھے
Next ملاوٹ 

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.