سمجھ نہیں آرھی

سمجھ نہیں آرھی
تحریر محمد اظہر حفیظ
میرا دل کرتا ھے سب کا بھلا ھو جائے سب اچھا ھوجائے سب عربی شہزادے جیسی زندگی گزاریں جہاں جائیں سب کچھ اپنا ھی لیکر جائیں، جب سب کچھ بندوبست ھوجائے تو پھر کہیں آج دل نہیں ھے کل آوں گا اور اس سے پتہ چلا شہزادے صاحب کے پاس اور گاڑیاں، بیڈ ،جم بھی ھیں پہلے تو میں سوچنے پر مجبور ھوگیا کہ جب سب کچھ یہاں بھیج دیا ھے تو وھاں شہزادہ صاحب سوئیں گے کیسے، سفر کس پر کریں گے، وغیرہ وغیرہ۔ لیکن جب انھوں نے دورہ ایک دن بعد کرنے کا ارادہ کرلیا تو اندازہ ھوا یہ سب کچھ ان کے پاس وافر مقدار میں ھے۔ 
اللہ انکو اور عطا کریں اگر جاتے ھوئے ھمیں وہ یہ سامان ھی دے جائیں تو بھی کافی ھے بعد میں یونیورسٹی کے جم کے طور پر استعمال ھوسکے گا۔ 
امریکی صدر تشریف لاتے ھیں تو سب کچھ ساتھ لاتے ھیں سعودی شہزادے آتے ھیں تو وہ بھی سب کچھ ساتھ لاتے ھیں ھم پہلی اسلامک ایٹمی قوت ھیں اور دنیا کی ساتویں ایٹمی قوت۔ کم از کم ھمیں کچھ ایسا انتظام کرنا چاھیئے کہ عالمی سطح کے لیڈران آسانی سے ھمارے ملک آسکیں ۔ اور ھمیں ایسی شرمندگی نہ اٹھانا پڑھے۔ اگر ھم جو پہلے سے موجود یونیورسٹیاں ھیں ان کے میعار کو بین الاقوامی سطح پر لے آئیں اور اس کے بعد نئی یونیورسٹیوں کی اجازت دیں تو بہت بھلا ھوجائے۔ نسٹ یونیورسٹی میں پڑھانے کا اتفاق ھوا پہلی یونیورسٹی ھے جہاں پر وھی ملٹی میڈیا پروجیکٹر لگا ھوا ھے جس کی ضرورت ھے جو رنگ اور روشنی صیح طور دکھاتا ھے خوشی ھوئی ورنہ تو سب سستے پروجیکٹر بنتے ھی یونیورسٹیوں کیلئے ھیں۔ 
نسٹ کے معیار کو دیکھتے ھوئے دل خوش ھوا اور بہت عرصے بعد انکے بچوں کی فوٹوگرافی کی اسائنمنٹ دیکھ کر اندازہ ھوا داخلے میرٹ پر ھوتے ھیں سب کا کام ایک دوسرے سے شاندار ۔ ماشااللہ۔
سب یونیورسٹیوں کو پابند کیا جائے کہ داخلے کا معیار قائم کیا جائے پرائیویٹ سیکٹر کی حوصلہ شکنی ھونی چاھیئے جو سب کو داخلہ دے دیتی ھیں اور کام کا کوئی معیار بھی نہیں ھوتا۔ ایک ادارے میں کئی سال پہلے پڑھانا اس لیئے چھوڑ دیا جب انکے ایک ڈائریکٹر نے کہا اظہر صاحب ھم پیسہ کمانے کیلئے ادارے بناتے ھیں فیل کرنے کیلئے نہیں آپ کسی کو فیل مت کریں اچھے اچھے نمبر دیں۔ میرے لیئے یہ ممکن نہیں اس لیئے اس ادارے سےمعافی مانگ لی۔ 
ایک اور یونیورسٹی میں کلاس میں گیا سر ھماری کلاس کے پاس کیمرہ نہیں ھے کیا یہ ضروری ھے فوٹوگرافی کیلئے؟،
سوال میرے ذھن میں ابھی تک گونج رھا ھے۔ دل میں تو آیا کہوں اس کے بغیر بھی گزارہ کر لیں گے لیکن چپ ھی رھا شاید اسی میں بہتری تھی۔ 
ھمیں اپنے تعلیمی نظام پر فورا توجہ دینی ھوگی۔ ورنہ یاد رکھنا جو بو رھے ھو وھی کاٹیں گے، زیادہ مقدار میں پڑھے لکھے جاھل سنبھالنے کیلئے ایک دن شاید ھمیں فوج کو دعوت دینا ھوگی ملکی سیکورٹی کی طرح ھمارے نوجوانوں کو بھی سنبھالے اور یہ وقت دور نہیں تیار رھیں۔
ھمیں فوری طور پر اپنے تعلیمی نظام پر سکول سے یونیورسٹی تک توجہ دینی ھوگی ۔ کسی بھی فیلڈ میں ایک بچے کا اچھا کام کرنا اور اس کی اشتہار بازی کرنا باعث سکون نہیں ھے ھمارے سب بچوں کو توجہ چاھیئے اگر واقعی ھم ایک نیا پاکستان اور ایک اعلی قوم بنانا چاھتے ھیں۔
ھم سب کو اپنے طور طریقے بدلنا ھونگے ، سکول،کالج،یونیورسٹی،دفاتر سب جگہ کو سگریٹ،پان اور منشیات سے پاک کرنا ھوگا۔ اور یہ اقدامات ھنگامی بنیادوں پر کرنے ھوں گے شاید ھمارا بجلی،پانی،گیس،سڑکوں،پلوں کے بغیر گزارہ ھوجائے، لیکن بغیر تربیت ھم اپنی نسل کے ساتھ نہیں چل سکتے، جاگو میرے پاکستانیوں جاگو،
گیس کے بل دس گنا بڑھ گئے کوئی نہیں بولا ۔نہ کوئی وجہ بتائی گئی۔ کیا اب گیس کی لوڈشیڈنگ نہیں ھوگی، کیا گیس کا پریشر مسلسل ایک جیسا رھے گا، کوئی تو وجہ بتائیں وھی گیس وھی سروس وھی دوسال میں کنکشن کس بات کے پیسے بڑھائے ھیں ۔ شاید ڈالر کی وجہ سے پر وہ بھی تو چالیس فیصد بڑھا ھے اور قیمتیں ایک ھزار گنا، کسی کو تو الزام دو ۔ میرا خیال ھے شھباز شریف کی ضمانت نواز شریف کی خیانت زرداری صاحب کا بھاری پن سب کا بل ھم نے ادا کرنا ھے۔ کوئی وجہ اس اشتہار کی جو بل بھیجنے کے بعد اخباروں میں آنا شروع ھوئے کہ یہ نیا نظام ھے محترم اگر یہ نیا پاکستان ھے تو مجھے نہیں چاھیئے مجھے واپس میرے قائداعظم محمد علی جناح صاحب والے پاکستان بھیج دیں، مجھے تو اس نئے پاکستان میں سب پچھلے ڈکٹیٹر اور جمہوریت پسند لیڈر یاد آرھے ھیں۔ کیا یہ بھی کوئی چال ھے کہ ھم چھتوں پر چڑھ کر اذانیں دیں کہ یہ مصیبت ٹل جائے۔ ھم مدینے کی ریاست کے رھائشی پاک پتن شریف جاکر خیر کی دعائیں مانگیں، بلاوں کے ٹلنے کیلئے صدقات دیں،
کوئی تو سمجھائے، کیونکہ مجھے کچھ سمجھ نہیں آرھا۔میری تنخواہ اور گیس کا استعمال وھی ھے بل دس گنا زیادہ یا میری تنخواہ دس گنا بڑھا دیں یا پھر گیس کا بل پرانی قیمت پر لے آئیں۔ فیصلہ آپکا ھے۔
مراد سعید صاحب نے درست فرمایا تھا خان صاحب وزیراعظم بنیں گے پہلے روز ھی دو سو عرب پاکستان آئیں گے سو عرب ھم قرضے اتارنے کیلئے استعمال کریں گے اور سو عرب ھم پاکستان پر لگائیں گے شکر الحمدللہ ایک ھزار عرب پاکستان آرھے ھیں سو عرب ھم دنیا کے منہ پر ماریں گے اور نو سو عرب کھا کر ھم حج کرنے جائیں گے۔ 
اللہ ھمارے ملک اور حکمرانوں کا حامی و ناصر ھو اور ھدایت دیں ھم سب کو بے شک اللہ بہتر ھدایت دینے والے ھیں۔ امین۔

Prev ستارے
Next اداس

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.