لینڈ سلائیڈ

لینڈ سلائیڈ

تحریر محمد اظہر حفیظ

پہاڑ کی اوپر والی تہہ پہاڑ کے اندر پانی جمع ھوجانے کی وجہ سے سلائیڈ کرجاتی ھے، جس سے بہت نقصان اٹھانا پڑتا ھے کئی دفعہ تو پوری سڑک ھی نیچے گر جاتی ھے کئی دفعہ راستہ بند ھوجاتا ھے، یہ ھمیشہ سیاحوں اور مسافروں کیلئے تکلیف کا باعث بنتی ھے، پہاڑ کی صرف اوپر والی تہہ اپنی جگہ سے سلائیڈ کرجاتی ھے باقی پہاڑ ویسے کا ویسے ھی رھتا ھے چائنہ نے اس کا حل پہاڑ کے اندر ٹنل بنا کر کیا، اس سلسلے میں قراقرم ھائی وے خاص طور پر عطا آباد جھیل کے ساتھ تقریبا نو کلومیٹر کی طویل ٹنل بنائی گئی ھیں اس کے بعد بھی خنجراب تک جاتے ھوئے جگہ یہ آپ کی سہولت کیلئے تخلیق کی گئی ھیں، جس سے بہت سہولت ھوجاتی ھے، پھر بھی قراقرم ھائی وے اکثر لینڈ سلائیڈ کی وجہ سے بند رھتی ھے، اس سلسلے میں نیشنل ہائی ویز اور فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن ھر وقت تیار رھتے ھیں، ھزارہ موٹر وے پر بھی کئی مقامات پر ٹنل کی مدد سے لینڈ سلائیڈ سے بچنے کے اسباب کئے گئے ھیں ، مجھے 2016 سے 2020 تک چار سال ٹائی سی جاپان، سی ٹی آئی جاپان، جائیکا جاپان اور نیشنل ہائی ویز پاکستان کے پراجیکٹ راکھی گاج جو فورٹ منرو سے پہلے آتا ھے این 70 کو ڈاکومنٹ کرنے کا موقع ملا تصویری اور ڈاکومنٹری دونوں اشکال میں، وھاں پر بہت سی نئی ٹیکنالوجی دیکھنے کو ملی، جیسا کہ سٹیل کے پل، سٹیل کی سڑک، لینڈ سلائیڈ والے پہاڑوں کی کی سلائی تاکہ وہ سلائیڈ نہ کریں، میں نے لمحہ بہ لمحہ سب مراحل کو فوٹوگراف کیا اور ویڈیوز بنائیں، مجھے بہت دکھ ھوا کہ ھمارے پاکستانی اداروں کے انجینئرز ان ٹیکنالوجیز کو سیکھنے کیلئے وھاں موجود نہیں تھے، پہاڑوں کی سلائیڈ روکنے والے طریقے سے ھم اپنے لینڈ سلائیڈ والے پہاڑوں کی سلائی کرکے راستوں کو محفوظ کر سکتے ھیں، اس میں بہت سی چیزیں ایسی تھیں جو پاکستان میں پہلی دفعہ ھورھیں تھیں، جاپانیوں کے ایس او پی ھر فیلڈ میں بہت کمال تھے، نہ حادثات ھورھے تھے نہ ٹریفک جام ھورھی تھی اور کام بھی تیزی سے ھورھا تھا، ھر چیز وقت پر ھورھی تھے، ھزاروں لوگ کام کر رھے تھے، اور کوئی لڑائی جھگڑا بھی نہیں تھا، پراجیکٹ مکمل ھوگیا اور اس نے علاقے کی شکل بدل کر رکھ دی، پودے لگانے سے لیکر پل بنانے تک سب کام بہت طریقے سے ھوئے، اگر کچھ انجینئر ھمارے ادارے ساتھ لگادیتے تو یہ ٹیکنالوجیز ھمارے بھی بہت کام آسکتیں تھیں، پہاڑوں کے اندر پانی اکٹھا ھونے سے کیسے روکنا ھے وقت پر پانی کیسے باھر نکلے گا فوم سیمنٹ کا استعمال ، جتنا پانی کئی جگہوں پر ڈالیں اسی مقدار سے وہ پانی باھر آجاتا تھا ایسے سسٹم بنائے گئے تھے کہ عقل حیران تھی، ھم چند پتھر لگا کر اس کے اوپر ایلومینیم کی جالی لگا کر اس کو محفوظ سمجھنا شروع کردیتے ھیں، ھمیں سفر کو محفوظ بنانے کیلئے نئے طریقے سیکھنے ھونگے، اور ان پر عمل کرنا ھوگا، ورنہ سیاحت میں ھم ترقی نہیں کر سکتے، این 70 اس کی ایک زندہ مثال ھے اس پراجیکٹ کو وزٹ کیجئے، شاید دنیا کے عجوبوں میں سے ایک بڑا عجوبہ ھے، کئی گھنٹے کا سفر اب چند منٹوں میں طے ھوجاتا ھے،

Prev رتجگے
Next جی لیں

Comments are closed.