موٹر سائیکل

موٹر سائیکل

تحریر محمد اظہر حفیظ

میں آج پھر اکیلا نکل پڑا اپنی موٹر سائیکل لے کر اور کیمرہ گھر ھی چھوڑ گیا اور آج میں دنیا کو کیمرے کی آنکھ سے نہیں دیکھنا چاھتا تھا بلکہ اس کو میں دنیا کی آنکھ سے دیکھنا چاہتا تھا اور ناکام لوٹ آیا کچھ نظر، نہیں آیا شائد میں نہیں دیکھنا چاھتا وہ سب جو دنیا ھے اور دنیا دیکھتی ھے
مجھے کسی کی مدد بھی نہیں چاھیے جو مجھے اس ظالم دنیا کو، دیکھنے میں مدد کرے تھوڑا وقت لگے گا شائد یہ سب مجھے سمجھ آجائے لیکن ابھی تک کچھ سمجھ نہیں آیا
میں زندگی میں ترقی کا خواھشمند بھی نہیں جہاں ھوں خوش ھوں جو ھے سب اچھا ھے الحمدللہ
میں کسی سفارش یا چاپلوسی کے حق میں بھی نہیں ھوں میرے اللہ نے ھمیشہ مجھ پر کرم کیا مجھے وہ سب عنائت کیا جسکا میں حقدار، تھا یا نہیں شکریہ اللہ تعالٰی
مجھے بہترین دوستوں بہترین دشمنوں سے نوازا، بہترین والدین بہترین بہن بھائی بہترین بیوی بہترین اولاد سے نوازا، شکر الحمدلله
میں نے کبھی زندگی میں کسی کو جیتنے یا ھرانے کی کوشش نہیں کی کچھ لوگ خود ھی ھار، جاتے ھیں اور کچھ خود ھی جیتا دیتے ھیں دونوں کا شکریہ
میں نے زندگی میں کبھی کسی سے نفرت نہیں کی جو لوگ مجھ سے کرتے ھیں میں ان سے معافی مانگتا ھوں اور معافی کا درخواست گزار ھوں
میں نے کسی سے بھی کسی ضرورت کے لیے محبت نہیں کی ھمیشہ بے لوث رھا اور رھوں گا باقی کوئی جیسا مرضی سمجھے اس کی اپنی مرضی ھے پھر بھی ان سب سے معافی چاھتا ھوں
میرا ضرورت سے زیادہ مخلص ھونا اکثر لوگوں شک میں ڈال دیتا ھے ڈلنا بھی چاھیے کیونکہ میری طرح کے انسان آج کل ذرا کم آتے ھیں اس لیے تھوڑا دل و دماغ کو وسعت دیں ھم سب آسانی میں رھیں گے انشاءاللہ
جن لوگوں کی میری وجہ سے دل آزاری ھوتی ھے وہ انکی خود ساختہ سوچ ھے سوچ بہتر کیجئے اور مجھے معاف، کر دیجئے شکریہ
میرے بزرگوں کا جماعت اسلامی سے گہرا تعلق تھا اور ھے اور انکا میں احترام کرتا ھوں اور انکی اولاد ھونے پر فخر ھے لیکن میرا کسی جماعت سے تعلق نہیں
خوشامد مجھے پسند نہیں نہ کرتا، ھوں نہ کروانی پسند ھے، اللہ کے سوا کسی کو سجدہ کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتا اسی لیے اسی کو سجدہ کرتا ھوں کرتا رھوں گا
میرے ماں باپ اللہ کی طرف لوٹ گئے ھیں اسی کی امانت تھے کوشش کی انکی خدمت کر سکوں اللہ انکے لیے بہت سی آسانیاں کریں امین
جن دوستوں کے والدین چلے گئے اللہ پاس اللہ ان سب کے لیے آسانیاں کریں امین اور جن کے والدین حیات ھیں اللہ انکو صحت کے ساتھ ایمان والی زندگی دیں امین اور وہ کوشش کریں انکی بھر پور خدمت کرنے کی اور کہیں میں کام آسکوں میں حاضر
میں زندگی میں کچھ جمع نہ کر سکا سب خرچ کر دیا اسکا کوئی ملال بھی نہیں، جو علم بھی میرے پاس، تھا سب تقسیم کردیا،
کوشش کی کسی کو دھوکہ نہ دوں پھر بھی کچھ دوستوں نے محسوس کیا انسے معافی کا طلبگار، ھوں۔
کبھی جان بوجھ کر کسی کا برا، نہیں چاھا انجانے میں اگر اپکا دل دکھا ھو اسے کیلئے معافی چاھتا، ھوں
مختلف لوگ میرے بارے میں مختلف رائے رکھتے ھیں انکو اسکا حق ھے جاری رکھیں اگر ھو سکے تو معاف کر دیں ورنہ جو دل چاھے سزا دے دیں، میں سر جھکائے کھڑا ھوں آپکے سامنے
مجھے مسلمان ھونے نبی اکرم صلی الله عليه وسلم کا امتی اور عاشق رسول صلی اللہ علیہ وسلم ھونے پر فخر ھے اور یہی میر آخرت کی تیاری اور سامان ھے
میں سب سے یقین کا رشتہ رکھتا ھوں اور جو، وہ کہتے ھیں یقین کرتا ھوں اور امید، کرتا ھوں وہ بھی مجھ پر، یقین کریں جیسے میں ان پر یقین رکھتا ھوں
مجھے کسی سیاسی پارٹی سے کچھ لینا دینا نہیں جو مملکتِ پاکستان کے حق بہتر ھو اس کو میرا سلام اور میری دعائیں نیک تمنائیں انکے ساتھ ھیں
رشوت لینے اور دینے والے دونوں کو برا سمجھتا ھوں اللہ دونوں کو ھدایت دیں امین
میں اللہ سے اپنے لیے اپنی اولاد اپنی فیملی اور دوست احباب کے لیے ھدایت کی دعا کرتا، ھوں اور معافی کی طلب رکھتا ھوں اللہ قبول فرمائیں امین
اللہ سب کو صحت کے ساتھ ایمان والی زندگی عطا، فرمائیں امین اور کسی کا محتاج نہ کریں امین
ضروری نہیں آپکا وھم یا شک سچ، ھو سب سوالوں کے جواب ھوتے ھیں سوال کرکے تو دیکھیں شائد سچ آپ کی سوچ کے بر عکس ھو، بے شک اللہ دلوں کے بھید، بہتر، جانتے ھیں
یہ تحریر کسی فرد واحد کے لیے نہیں لکھی گئی سب عزیزواقارب کے لیے ھے اس کو، کوئی بھی آپنی ذات سے وابستہ نہ کریں تو، مہربانی ھوگی شکریہ

Prev فیصلے 
Next میرے حضور صلی الله عليه وسلم ھمیں معاف کردیجئے گا 

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.