میرا رب

میرا رب
تحریر محمد اظہر حفیظ

میرا رب سب سے عظیم تر ھے اور اس کی شان بیان کرنا میرے بس میں ھی نہیں۔
مجھے شرم آتی ھے اس سے چھوٹی چھوٹی چیزیں اور دعائیں مانگتے ھوئے اور بڑی نہ کوئی میری ضرورت ھے اور نہ کوئی خواھش۔ ایک دفعہ مجھے یاد ھے اپنے والد کی زندگی مانگی تھی بس یہی کہا تجھے پتہ ھے اسکی مجھے زیادہ ضرورت ھے اور اس نے انکی زندگی موڑ دی اور میری سارے ساتھ دے کر وہ تقریبا چوبیس سال بعد اللہ پاس چلے گئے۔ اس کی چیز تھی وہ لے گیا۔ باقی ساری زندگی بس رویا ھوں مانگا بتایا کچھ نہیں سب کے سامنے یا چھپ کے بس یہی کہا تجھے تو سب معلوم ھے میری ھی کوئی غلطی ھوگی۔ میرے ساتھ کسی نے بد تمیزی کی، میرا حق چھینا میں نے پھر بھی بس یہی روتے ھوئے کہا۔ ربا سوھنیا میری ھی کوئی غلطی ھوگی۔ کہا اور بس مسائل حل، شکر الحمدللہ۔
لوگوں کی چھوٹی بڑی دعائیں جب سنتا ھوں رب کے سامنے، سپیکر لگاکے، رونے والی آواز لگا کے جب انکے ڈرامے دیکھتا ھوں کہ ان کو میرے رب کا کچھ بھی پتہ نہیں کس کو دھوکہ دے رھے ھیں کس سے فراڈ کر رھے ھیں صرف ایک وہ ھی تو ھے جس کو سب پتہ ھے۔ بس اس بات کو مان لو اور دیکھو سب حل ھوتا، شک کرنے پر کون دیتا ھے شک دل سے نکالو اور میرے رب کو بساو اپنے دل میں۔
یہ میری ذاتی رائے ھے آپ اختلاف بھی کر سکتے ھیں میرے رب کو حوالوں، سفارشوں کی ضرورت ھی نہیں جب وہ سب سے بڑا ھے تو کسی اور کو کہنے کی بجائے خود بات کرکے دیکھو باقی تو سب تمھاری طرح اس کے بندے ھی ھیں۔ سفارش تو ایماندار افسر پسند نہیں کرتے میرے اللہ کیسے کریں گے۔
اپنے طریقے بدلو۔ زندگی خود بدل جائے گی۔
میری چار بیٹیاں ھیں الحمدللہ ایک دفعہ کہیں جانا ھوا وھاں کوئی پیر صاحب بیٹھے تھے شاید انکو اطلاع بھی دی گئی تھی کہ انکی چار بیٹیاں ھیں ۔ جب اندر گیا سلام کیا۔ مجھے والدین اور بیٹیوں کے علاوہ کسی کے ھاتھ چومنے کی عادت ھی نہیں ھے۔ انہوں نے ھاتھ بڑھایا میں نے مصافحہ کیا، کہنے لگے خادم آپ کیلئے کیا دعا کرے ۔ میں نے کہا جناب دعا کیجئے اگر ممکن ھو تو پانچوں نمازیں ادا کرنے لگ جاوں۔ کچھ اور جی باقی رب کا دیا سب کچھ ھے الحمدللہ۔ کہنے لگے آپ پہلے انسان ھیں جو نماز کیلئے دعا کی درخواست کر رھے ھیں۔ جی رب سے بھی روز کرتا ھوں آپ نے کہا تو آپ کو بتادیا، جب وہ چاھے گا شروع ھوجائے گی۔ آپ بے شک رھنے دیں۔
آجکل دفتر کے علاوہ گھر ھے باقی سب کچھ بند ھے یہاں تک کہ واک بھی۔ آج جناح سپر مارکیٹ اسلام آباد گیا تو دل کانپ گیا جیسے جموں کشمیر کی کوئی مارکیٹ ھو اور کرفیو لگا ھو، نہ بندہ نہ بندے کی ذات۔
زیادہ وقت گھر پر بچوں ساتھ وقت گزرتا ھے۔ بہن بھی کچھ دن کیلئے آئیں تھیں راستے بند ھیں تو وہ بھی ساتھ ھی ھیں بھائی انکے بچے میرے بچے ھم ماشاءاللہ سے پندرہ لوگ ساتھ ھیں ، رونق لگی ھوئی ھے۔ روز نئی نئی چیزیں بنا کر سب کو کھلاتا ھوں کچن کافی حد تک سنبھالا ھوا ھے۔ کیونکہ یہ میری نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت ھے گھر کے کام کاج میں مدد کرنا اور گھر آئی بیٹیوں کی خدمت اور احترام کرنا۔ یہ سب بھی ضروری ھے رب کو راضی رکھنے کیلئے۔
ابھی تک سب کو چکن نہاری، چکن کڑاھی، چکن بریانی، آلو قیمہ انڈے، پکوڑے اور چاکلیٹ کیک بنا کر کھلا چکا ھوں، ابھی بہت سی ڈشز ذھن میں ھیں۔ بہت عرصے بعد وقت ملا کوکنگ کرنے کا اچھا وقت ھے بہن، بھائی، بیوی، بچوں سے پیار بڑھانے کا اور پیار رینیو کرانے کا،
شکر میرے رب کا جس نے ھمیں بہن بھائیوں کو اکٹھا کیا، اب ھمارے ماشاءاللہ اپنے بچے ھیں انکا ساتھ ساتھ کھیلنا، لڑنا، صلح کرنا، سونا، جاگنا، نماز پڑھنا، کھانا پینا، میری ٹانگیں دبانا، طرح طرح کی آوازیں ھیں، ماموں، چاچو،بابا مجھے لگتا ھے میری سب دلی دعائیں قبول ھوگئیں ھیں ۔ میں خوش ھوں ابھی فجر پڑھ کر رونے لگ گیا یا باری تعالی یہ جو کرونا وائرس ھے نا یہ بھی میری غلطی ھے۔ مجھے احساس ھے۔ پہلے تو آپ درگزر کر دیتے تھے اس دفعہ پکڑ سخت ھوگئی ھے۔ پھر ذھن میں وہ نقشے چلنا شروع ھوگئے، چائنہ میں اتنے ھلاک، اٹلی میں اتنے ھلاک، امریکہ میں اتنے ھلاک، سپین میں اتنے ھلاک، پاکستان میں اتنے ھلاک تو یاد آیا میرا رب ھمت سے زیادہ کسی پر بوجھ نہیں ڈالتا جن کے پاس لاکھوں وینٹیلیٹر تھے ان کے مریض بھی لاکھوں تھے اور جن کے پاس سینکڑوں وینٹیلیٹر ھیں ان کے مریض بھی سینکڑوں ھیں ، بے شک میرا رب دلوں کے حال جانتا ھے اور معاف کرنے والا ھے، سب سے بہتر شفاء دینے والا ھے۔ میری امی جی کہتیں تھیں ” میرا کالو کرے کوولیاں رب سیدھیاں پاوے” مجھے امید واثق ھے کہ غلطی ھمیشہ کی طرح میری ھی ھے پر میرا رب رحیم ھمیشہ کی طرح ٹھیک کر دیں گے۔ انشاءاللہ۔
میری امی جی کی دعا جو میرے ساتھ ھے

Prev اپنا حصہ مانگیں نہیں ادا کریں
Next مورچہ بند

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.