میں کون ھوں

میں کون ھوں
تحریر محمد اظہر حفیظ
نہ میں قارون ھوں نہ میں فرعون ھوں۔ نہ چاند ھوں نہ ستارہ ھوں۔ نہ شعر ھوں نہ استعارہ ھوں۔ نہ شیطان ھوں نہ فرشتہ ھوں۔ نہ نیک ھوں نہ گنہگار ھوں۔ نہ جوان ھوں نہ بوڑھا ھوں۔ نہ صحتمند ھوں نہ بیمار ھوں۔ نہ بد قسمت ھوں نہ خوش قسمت ھوں۔ نہ سفید ھوں نہ سیاہ ھوں۔ نہ عربی ھوں نہ عجمی ھوں۔ نہ شیعہ ھوں نہ سنی ھوں۔ نہ حنفی ھوں نہ وھابی ھوں۔ نہ یہودی ھوں نہ عیسائی ھوں۔ نہ سندھی ھوں نہ بلوچی ھوں۔ نہ پنجابی ھوں نہ پٹھان ھوں۔ نہ یوتھیا ھوں نہ پٹواری ھوں۔ نہ بھٹو ھوں نہ زرداری ھوں۔ نہ مگسی ھوں نہ لاشاری ھوں۔ نا قاتل ھوں نہ مقتول ھوں۔ نہ رھبر ھوں نہ رھزن ھوں۔ نہ عالم ھوں نہ طالب ھوں۔ نہ عاشق ھوں نہ معشوق ھوں۔ نہ سانپ ھوں نہ سپیرا ھوں۔ نہ فن ھوں نہ فنکار ھوں۔ نہ جن ھوں نہ بھوت ھوں۔ نہ شہری ھوں نہ دیہاتی ھوں۔ نہ گلی ھوں نہ محلہ ھوں۔ نہ سائیکل ھوں نہ کار ھوں۔ نہ شہ زور ھوں نہ شہسوار ھوں۔ نہ کھیل ھوں نہ کھلاڑی ھوں۔ نہ فعل ھوں نہ عمل ھوں۔ نہ واحد ھوں نہ جمع ھوں۔ نہ نیکو کار ھوں نہ بدکار ھوں۔ نہ قابل حسد ھوں نہ قابل رشک ھوں۔ نہ مترادف ھوں نہ متضاد ھوں۔ نہ منزل ھوں نہ مسافر ھوں۔ نہ زندہ ھوں نہ مردہ ھوں۔ نہ خواھش ھوں نہ حاصل ھوں۔ نہ شک ھوں نہ یقین ھوں۔ نہ سچ ھوں نہ جھوٹ ھوں۔ نہ آگ ھوں نہ پانی ھوں۔ نہ زمین ھوں نہ آسمان ھوں۔ نہ دریا ھوں نہ سمندر ھوں۔ نہ جرم ھوں عدل ھوں۔ نہ فلم ھوں نہ کردار ھوں۔ نہ غلام ھوں نہ آزاد ھوں۔ نہ تصویر ھوں نہ شاھکار ھوں۔ نہ گاہک ھوں نہ دوکاندار ھوں۔ نہ بیوقوف ھوں نہ سمجھدار ھوں۔ نہ پل ھوں نہ سڑک ھوں۔ نہ کھیت ھوں نہ کھیلان ھوں نہ جیت ھوں نہ ہار ھوں۔ نہ دن ھوں نہ رات ھوں ۔ نہ پیر ھوں نہ مرید ھوں۔ نہ فوجی ھوں نہ جمہوری ھوں۔ نہ بندر ھوں نہ مداری ھوں۔ نہ ماہر ھوں نہ اناڑی ھوں۔ نہ پاگل ھوں نہ عاقل ھوں۔ نہ حقیقت ھوں نہ خواب ھوں۔ نہ چھت ھوں نہ دیوار ھوں ۔ نہ پہاڑ ھوں نہ ھموار ھوں ۔ نہ نوری ھوں نہ ناری ھوں۔ نہ عوامی ھوں نہ سرکاری ھوں۔ نہ ڈرائیور ھوں نہ سواری ھوں۔ نہ نقد ھوں نہ ادھاری ھوں۔ نہ بت ھوں نہ پجاری ھوں۔ نہ مضمون ھوں نہ کہانی ھوں ۔

Prev حیران
Next میں دیکھتا ھوں 

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.