وقت

وقت
تحریر محمد اظہر حفیظ

وقت بدل رھا ھے۔ پہلے راستے کھلے تھے تو کوئی نہیں ملتا تھا، اب راستے بند ھیں تو کوئی نہیں ملتا، پہلے بہانے تھے مصروفیت بہت ھے اب بہانہ ھے گھر سے کیسے نکلیں، بہت پہلے سے مجھے احساس ھونا شروع ھوگیا تھا کہ زندگی اکیلے اکیلے ھی جینا پڑے گی، اس لئے میں بہت خاموشی سے الگ تھلگ ھونا شروع ھوگیا تھا، شعر سنتے تھے کہ جن پر تکیہ کیا وھی پتے ھوا دینے لگے، پھوپھی ایک بہت معزز رشتہ ھے اور اس کو بے ادب لوگوں نے بہت ھی بے توقیر کیا، جب پھوپھی کی اصطلاح سمجھنے کی کوشش کی تو پتہ چلا یہ وہ پھوپھی نہیں ھے جو باپ کی بہن ھوتی ھے بلکہ یہ پھوپھی تو کوئی بھی مرد و عورت ھو سکتا یا ھوسکتی ھے، مختلف شعبوں میں فائز مختلف پھوپھیاں دیکھی ان کے کردار کو سراھا بھی اور سمجھنے کی کوشش بھی کی ، پھوپھی ھونا ایک بہت فن کا کام ھے، جو خود پوسٹ نہیں کر سکتے دوسرے سادہ لوح لوگوں کو بھیجیں اور پوسٹ کرنے پر اکسائیں، اکثر یہ لوگ کامیاب بھی ھوتے ھیں پر ایک دن بے نقاب ھوجاتے ھیں، اور پھر گھر کے بھی نہیں رھتے، دوست تو وہ ھے جس کو کچھ برا یا اچھا لگے فورا بتا دے اگر آپ دل میں رکھ کر بیٹھے ھیں تو پھر آپ ایک اچھے دوست نہیں ھوسکتے بس ایک پھوپھی ھی ھوسکتے ھیں۔ کچھ پھوپھی نما لوگوں کے ساتھ زندگی کے دس سے پندرہ برس گزار دیئے اور اب احساس ھوتا ھے زندگی کا کتنا بڑا حصہ ضائع کردیا، کچھ لوگوں کا خیال ھے چلو سبق حاصل ھوگیا، پر میں جب طالبعلم ھی آرٹس کا ھوں تو میں نے بیالوجی، فزکس اور کیمسٹری کے سبق حاصل کرکے کیا کرنے، مجھے زیادہ تکنیکی لوگ پسند نہیں ھیں، سادہ سا انسان ھوں سادگی ھی پسند کرتا ھوں، مجھے نہ بناوٹ آتی ھے اور نہ ھی بناوٹ پسند ھے، میں نے جن راستوں پر جانا نہ ھو میں انکے راستے معلوم کرنے کی بھی کوشش نہیں کرتا، میرا بہت اچھا دوست،استاد اور بڑا بھائی توصیف احمد کمال کا فنکار ھے ماشاءاللہ، ڈرائنگ، پینٹنگ، کیلی گرافی، پین اینڈ انک سب میں ھی کام بہت اچھا تھا پھر اس کی لاھور پنجاب یونیورسٹی میں ھسٹری کے ایک پروفیسر صاحب سے ملاقات ھوگئی اور انھوں نے اس کو اولڈ ماسٹرز کا اتنا کام دکھایا کہ وہ سمجھنے لگا کہ وہ تو شاید کبھی بھی ایسا کام نہیں کرسکتا اور وہ آرٹ سے دور ھوتا چلا گیا، پھر اس نے پیپر کٹنگ آرٹ کو اپنایا اور آج ماشاءاللہ اس کا اپنے فن میں ایک قابل احترام نام ھے، اللہ اسے مزید ترقی، عزت، کمال فن عطا کریں آمین،
میرا تھوڑا بہت دور کا تعلق فوٹوگرافی سے ھے، کبھی کبھار تصویر بنا لیتا ھوں اور وہ کسی قابل بھی نہیں ھوتیں اس لئے اس کو نہ تو کسی مقابلے میں بھیجتا ھوں اور نہ ھی لوگوں کو دکھا دکھا کر ڈراتا ھوں، بطور طالبعلم فوٹوگرافی پاکستان میں ھونے والے اچھے کام کو دیکھتا ھوں سراھتا ھوں اور جو کام سمجھ نہ آئے اس پر خاموش رھتا ھوں۔ میں نہیں سمجھتا کہ میرے اندر کوئی ایسی قابلیت ھے جو کسی کی راھنمائی کر سکوں، میری ساری کی ساری تصاویر تصویریں ھی ھیں میں ان کو فائن آرٹ یا ڈیجیٹل آرٹ کے لیول پر نہیں لا سکا اور میں اسکا برملا اظہار کرنے میں کوئی شرمندگی بھی محسوس نہیں کرتا، انٹرنیشنل لیول پر فوٹوگرافی کے ھونے والے کام کو دیکھتا ضرور ھوں لیکن میری عقل سے باھر ھے ایسی تصاویر کیسے بنتی ھیں، اور میں نے فوٹوگرافرز کے نام تو یاد کرنے کی کبھی کوشش ھی نہیں کی۔ زندگی گزر رھی ھے، اور گزر جائے گی، فوٹوگرافی میں بہت سارے سال لگانے کے بعد احساس ھوا کہ اس کے کچھ اصول وضوابط کی پابندی بھی ھونے چاھیئے اس کیلئے آگے پڑھائی شروع کر دی اور تھیسزز لکھ رھا ھوں عنوان فائنل ھوگیا ھے کہ “پاکستان میں عوامی مقامات پر صحافتی فوٹوگرافی کرتے وقت کن چیزوں کو ملحوظ خاطر رکھنا چاھیئے، امید ھے دسمبر2020 تک یہ کام مکمل ھوجایے گا اور میری کوشش ھے کہ اس کام کو مکمل کرنے کے بعد اگلا تھیسزز “اخلاقیات فوٹوگرافی” لکھا جائے۔ اگر میں اپنی زندگی میں آپکی دعاوں سے یہ دو کام کرگیا تو مجھے جانے میں آسانی ھوگی کہ پاکستان میں فوٹوگرافی کی جو میری ذمہ داری تھی وہ ادا ھوگئی، اگر میں یہ حق ادا نہ کرسکا تو میرے فوٹوگرافرز آپ یاد رکھیئے گا کہ اس جانب پہلا قدم میں نے لیا تھا،
اس کام میں مجھے سب فوٹوگرافرز سے مدد چاھیئے ھوگی کیونکہ آپ سب علم میں مجھ سے بہت آگے ھیں اور انشاءاللہ میرے اللہ کی مدد شامل حال رھی تو یہ کام مکمل ھوجائے گا۔ میں آجکل پڑھنے میں مصروف ھوں کہ بین الاقوامی دنیا میں اس پر ابھی تک کیا کیا کام ھوا ھے۔ اور ھمیں کیا کام کرنا ھے، مجھے امید ھے میری اس ادنی سی کوشش سے فوٹوگرافی کے کافی سارے مسائل حل کرنے میں مدد ملے گی، انشاءاللہ،
میری تمام استاد فوٹوگرافرز سے التجا ھے کہ نئے آنے والوں کو فوٹوگرافی کرنے میں مدد کریں، انکی حوصلہ افزائی کریں اور ان کو ڈرائیں مت، ساتھ ساتھ راھنمائی کریں کہ اپنی تصاویر بنائیں، تصویر چوری کرنا، مکس کرنا ایک نامناسب طریقہ ھے اس سے پرھیز کریں، لوگوں کے لئےآسانیاں کریں، اللہ آپ کے لئے آسانیاں کریں گے، اگر کسی بہن بھائی کو میں نے فوٹوگرافی میں مشورہ دیا ھے اور وہ انکو ناگوار گزرا ھے تو میں اپنا مشورہ واپس لیتا ھوں اور ان سے معافی چاھتا ھوں، اب یہ والی سروس بھی خاموشی کی نظر ھوچکی ھے۔ آپ سب کا کام بہت اچھا ھے اور میں آپ کے کام کو دیکھ کر سیکھ رھا ھوں، لوگوں کا وقت استاد ھوتا ھے اور میرے استاد آپ سب ھیں۔ سلام استاد

Prev اور بھی تھے راستے
Next بیٹ بال

Leave a comment

You can enable/disable right clicking from Theme Options and customize this message too.